“پاکستان نے پڑوسی ملک ہونے کا حق ادا کردیا”

محمد خالد داروگر، دولت نگر، سانتا کروز، ممبئی

مکرمی!

ہمارے ملک کے ناعاقبت اندیش حکمرانوں کی غلط پالیسیوں اور ہندو مسلم سیاست کی وجہ سے پورا ملک قیامت صغریٰ کی عملی تصویر پیش کر رہا ہے۔ کورونا وائرس کی وبا کی دوسری لہر نے ہر طرف تباہی و بربادی کا طوفان برپا کیے ہوئے ہے۔ حکومت کی غفلت اور چشم پوشی نے آج یہ دن دکھائے ہیں کہ آکسیجن کی کمی کی وجہ سے اسپتالوں اور اس کے باہر انسانوں کی سانسیں اکھڑ رہی ہیں اور وہ اپنے اہل وعیال کے سامنے بےبسی کے عالم میں دم توڑ کر دنیائے فانی سے رخصت ہو رہےہیں۔ پورا ملک لاشوں کی چیتاوں سے عالمی افق پر جگمگا رہا ہے اور یہ ہمارے لئے شرم کی بات ہے۔

ایسے سنگین حالات میں بھی ہمارے حکمرانوں کا دل نہیں پگھل رہا ہے بلکہ ان کے دلوں کی سختی میں اور زیادہ اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ ایسا لگتا ہے کہ ان کی نظر میں انسانی زندگی کی کوئی اہمیت نہیں رہ گئی ہے۔ دوسری طرف پڑوسی ملک پاکستان ہے جس کے سہارے پر ہمارے ملک کے فرقہ پرست حکمران زندگی کی سانس لے رہے ہیں اور ان کا گودی میڈیا پاکستان کو صفحہ ہستی سے مٹانے پر ہر دم تلا رہتا ہے اور آج وہی پاکستان ہندوستان کی اس مصیبت کی گھڑی میں ہر طرح کی مدد کرنے کے لیے آگے آیا ہوا ہے۔

پاکستان کے وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سرکاری طور پر مدد اور ریلیف کی پیشکش کی ہے اور کہا کہ وہ ہندوستان کو وینٹی لیٹر، بی پیپ، ڈیجیٹل ایکسرے مشین، پی پی ایز اور دیگر اشیاء مہیا کرنے کو تیار ہے۔ وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا کہ”میں کورونا کے خلاف اس جنگ میں ہندوستان کے عوام کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتا ہوں۔ عالم انسانیت کے لیے خطرہ بن جانے والے اس وائرس کا ہمیں مل کر مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے۔

پاکستان کے سب سے بڑے خیراتی ادارے ایدھی فاؤنڈیشن نے 50/ایمبولینس اور معاون طبی عملہ بھیجنے کی پیشکش کی ہے اور کہا کہ وہ خود مدد کے لئے ہندوستان آنے کو تیار ہیں۔ پاکستان کے مایہ ناز فاسٹ بولر شعیب اختر نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں درد بھری بھرائی ہوئی آواز میں اپنے ہم وطنوں اور عالمی برادری سے درخواست کی کہ وہ مصیبت کی اس گھڑی میں ہندوستان کی ہر لحاظ سے مدد کرنے میں آگے آئیں اور اس بحران سے باہر نکلنے میں اس کی مدد کریں۔ یہاں پر دیکھنے کی جو بات ہے وہ یہ ہے کہ پڑوسی ملک میں انسانی ہمدردی کا ایک جذبہ حکومتی سطح سے لیکر انفرادی سطح تک امڈ آیا ہے۔

حکومتی سطح پر وزیراعظم عمران خان اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، تنظیمی اور اداراہ جاتی سطح پر ایدھی فاؤنڈیشن اور انفرادی سطح پر فاسٹ بولر شعیب اختر انسانی ہمدردی اور جذبہ خدمت سے لیس ہوکر پڑوسی ہونے کے ناطے آگے آئیں ہیں اور اس طرح پاکستان نے پڑوسی ملک ہونے کا حق ادا کر دیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Content is protected !!
Open chat
1
!Hello
!How Can I Help You
واٹس ایپ گروپ جوائن کرنے کیلئے نیچے لنک پر کلک کریں۔

https://chat.whatsapp.com/Cu3chd0osKYFJfN3AkBLQ9